صحتکورونا وائرس

کورونا کے شکار افراد دماغی امراض میں بھی مبتلا ہونے لگے، برطانوی ماہرین کی تحقیق

برطانوی ڈاکٹروں نے خبردار کیا ہے کہ کورونا وائرس کے باعث وہ افراد بھی دماغی امراض کا شکار ہوسکتے ہیں جنہیں شدید انفیکشن ہے اور وہ بھی جن میں وائرس کی ہلکی علامات پائی جاتی ہیں۔

برطانوی ڈاکٹروں نے خبردار کیا ہے کہ کورونا وائرس کے باعث وہ افراد بھی دماغی امراض کا شکار ہوسکتے ہیں جنہیں شدید انفیکشن ہے اور وہ بھی جن میں وائرس کی ہلکی علامات پائی جاتی ہیں۔  یونیورسٹی کالج لندن میں کی گئی ایک نئی تحقیق کے مطابق کورونا وائرس کے باعث  ذہنی اضطراب ہو سکتا ہے، نسوں کو نقصان پہنچ سکتا ہے اور اسٹروک بھی ہو سکتا ہے۔

اس کے علاوہ  کورونا وائرس کے وہ مریض جنہیں زیادہ انفکیشن نہیں ہے۔ وہ بھی شدید دماغی بیماریوں کا شکار ہو سکتے ہیں۔

ڈاکٹروں کی ٹیم نے دماغی امراض جانچنے کے حوالے سے اسپتال میں داخل کورونا وائرس کے 43 مصدقہ اور مشتبہ مریضوں کا جائزہ لیا جس سے معلوم ہوا کہ 10 مریضوں میں عارضی برین ڈسفنکشن تھا، 12 مریضوں کے دماغ میں سوجن تھی جبکہ آٹھ کو اسٹروک اور آٹھ مریضوں کے دماغوں کی نسوں کو نقصان پہنچا تھا۔

جن مریضوں کے دماغوں میں سوجن تھی ان میں ’اکیوٹ ڈسیمینیٹڈ اینسیفالومائلیٹیس‘ (اے ڈی ای ایم) بیماری کی تشخیص ہوئی جو عام طور پر وائرل انفیکشنز کے بعد بچوں میں ہو جاتی ہے۔ یونیورسٹی کالج لندن کے کوئنز سکویر انسٹیٹیوٹ آف نیورولوجی اور این ایچ ایس کے پروفیسر ڈاکٹر مائیکل زانڈی کا کہنا ہے کہ ’ہم نے توقع کے برعکس لوگوں کی بڑی تعداد میں دماغی سوجن دیکھی جسے سانس کی بیماری کے ساتھ نہیں جوڑا جا سکتا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button