دنیا

یورپین یونین، عرب لیگ اور دیگر گروپس کی مخالفت کے باوجود امریکہ کا اسرائیل کو گرین سگنل

اقوام متحدہ ، یورپی اور عرب طاقتوں نے بدھ کے روز اسرائیل کو متنبہ کیا ہے کہ اس کے فلسطینی سرزمین کو الحاق کرنے کے منصوبوں سے امن کو ایک بہت بڑا دھچکا لگے گا، لیکن امریکہ نے اسرائیل کو گرین سگنل دے دیا ہے۔

یورپین یونین، عرب لیگ اور دیگر گروپس کی مخالفت کے باوجود امریکہ نے اسرائیل گرین سگنل دے دیا

اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو سے توقع کی ہے کہ اس سے قبل انحصاری عمل شروع ہوجائے گا ، اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس میں بین الاقوامی برادری کو ایک حتمی موقع فراہم کیا گیا تھا کہ وہ ان کی راہ میں تبدیلی کی درخواست کرے۔
اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گٹیرس نے ورچوئل کانفرنس کو بتایا کہ میں اسرائیلی حکومت سے اپنے الحاق کے منصوبوں کو ترک کرنے کا مطالبہ کرتا ہوں۔

مشرق وسطی کے لئے اقوام متحدہ کے کوآرڈینیٹر نکولے مالڈینوف نے کہا کہ الحاق “اسرائیل – فلسطینی تعلقات کی نوعیت کو غیر منطقی طور پر تبدیل کرسکتا ہے”۔

انہوں نے کہا ، “یہ اسرائیل کے ساتھ امن ، سلامتی اور باہمی اعتراف میں رہنے والی مستقبل کی قابل عمل فلسطینی ریاست کی حمایت میں بین الاقوامی کوششوں کی ایک چوتھائی سے بھی زیادہ رقم کا خطرہ ہے۔

سات یورپی ممالک – بیلجیم ، برطانیہ ، ایسٹونیا ، فرانس ، جرمنی ، آئرلینڈ اور ناروے نے ایک مشترکہ بیان میں متنبہ کیا ہے کہ منسلک ہونا مشرق وسطی کے امن عمل کو دوبارہ شروع کرنے کے امکانات کو “سخت نقصان پہنچا” گا۔

انہوں نے متنبہ کیا ، “بین الاقوامی قانون کے تحت ، اسرائیل کے ساتھ ہمارے قریبی تعلقات کے لئے منسلک ہونے کے نتائج برآمد ہوں گے اور وہ ہمیں تسلیم نہیں کریں گے۔”

ادھر سعودی عرب کا کہنا ہے کہ غرب اردن اور وادی اردن کا اسرائیل سے الحاق عالمی قانون اور اس حوالے سے سلامتی کونسل کی منظور کی گئی قراردادوں کی کھلی کی خلاف ورزی ہوگی۔فلسطینی اراضی کے الحاق سے خطے میں دیر پا امن کے قیام کی تمام مساعی تباہ ہوجائیں گی۔مشرق وسطیٰ اور مسئلہ فلسطین سے متعلق سلامتی کونسل کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سعودی عرب کے اقوام متحدہ میں نائب مندوب ڈاکٹر خالد بن محمد المنزلاوی نے کہا کہ اسرائیل کو غرب اردن اور وادی اردن سمیت دیگر فلسطینی علاقوں پر اپنی خود مختاری کےقیام سے باز آنا چاہیے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button