ادب

کنور امتیاز احمد

بن مرا ہم سفر سوچ کر دیکھ کر
ساتھ دے ، پر مری رہگزر دیکھ کر

اپنا ماضی بہت یاد آیا مجھے
سبز پتا کوئی شاخ پر دیکھ کر

میں نے بھی چار دن زندگی کی تو تھی
یاد آیا مجھے ایک گھر دیکھ کر

چاندنی رات پھر چاندنی رات ہے
بے مزہ ہو گیا ہوں سحر دیکھ کر

عشق پر میرا ایمان پختہ ہوا
اپنی جانب کسی کی نظر دیکھ کر

دوست مجھ کو کوئی ایسی جلدی نہیں
چل رہا ہوں میں اپنا سفر دیکھ کر

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button